اداریہ : سیوریج کی بوسیدہ لائنوں کومرمت کرنے والی ٹھیکے دار کمپنی کی لوٹ مار - Baithak News

اداریہ : سیوریج کی بوسیدہ لائنوں کومرمت کرنے والی ٹھیکے دار کمپنی کی لوٹ مار

ملتان شہر کے رہنے والے مرے کو مارے شاہ مدار جیسی حالت کا شکار ہیں ۔ ایک طرف بدترین تاریخی مہنگائی نے ان کی کمر توڑ رکھی ہے تو دوسری طرف مبینہ طور پر اب واسا ملتان کی ایک ٹھیکے دار کمپنی نے اندرون شہر ملتان کے کئی علاقوں میں سیوریج کی بوسیدہ ہوکر بند ہوجانےوالی سیوریج لائنوں کو ٹھیک کرنے کے دوران بند کیے گئے شہریوں کے سیوریج کنکشن کی بحالی کےلئے فی کنکشن دس ہزار روپے بٹورنا شروع کردیے ہیں ۔ حالانکہ واسا ملتان کے رولز کے مطابق اگر کسی علاقے میں پہلی بار نئی سیوریج لائن ڈالی جائےگی تو ہر صارف کو نئے کنکشن کی 10 ہزار روپے فیس دینا ہوگی لیکن بوسیدہ پائپ لائنوں کو درست کرتے وقت منقطع کیے جانےوالے کنکشن بلامعاوضہ بحال کیے جائینگے ۔ واسا نے اندرون شہر ملتان میں 12 بڑی اہم سڑکوں پر سیوریج کی بوسیدہ لائنوں کو درست کرنے کا ٹھیکہ ایک ارب روپے کی مالیت سے ایک فرم کو دیا تھا۔ ایک ارب روپے کے ٹھیکے میں ان 12 سڑکوں کے دونوں اطراف موجود ہزاروں گھرانوں کے منقطع ہونےوالے سیوریج کنکشن کی بحالی کےلئے درکار رقم بھی شامل ہے لیکن ٹھیکے دار فرم نے بوسیدہ لائنوں کو ٹھیک کرنے کا کام خود مکمل کرنے کے بجائے یہ ٹھیکہ آگے کئی پیٹی ٹھیکے داروں میں تقسیم کردیا اور یہ پیٹی ٹھیکے دار اب شہریوں سے سیوریج کنکشن کی بحالی کے فی کس 10 ہزار روپے وصول کررہے ہیں۔ واسا حکام ٹھیکے دار کمپنی کو بوسیدہ سیوریج لائنیں ٹھیک کرنےکی لاگت ایک ارب روپے کی مکمل ادائیگی 12 سڑکوں کے دونوں اطراف گھروں کے کنکشن کی بحالی سے پہلے کرچکی ہے جو اپنی جگہ خلاف قانون ہے۔ ایڈیشنل چیف سیکرٹری اور ایڈیشنل سیکرٹری لوکل گورنمنٹ و کمیونٹی ڈویلپمنٹ جنوبی پنجاب کو ملتان کے شہریوں سے ہونےوالی اس نا انصافی کا فوری نوٹس لینا چاہیے۔

مزید جانیں

مزید پڑھیں

صارفین کو ریلیف کی فراہمی کیلئے اقدامات اُٹھائے جارہے ہیں:محمد ارشد

حکومت پنجاب کی ہدایت پراشیاء ضروریہ کی مقررہ نرخوں پرفراہمی کو یقینی بنایاجائے لیہ( بیٹھک رپورٹ )ضلع میں صارفین کو ریلیف کی فراہمی کے لئے اقدامات اُٹھائے جارہے ہیں تاکہ صارفین کو سستی اشیاء خورد نوش فراہم کی جاسکیںاس سلسلہ مزید پڑھیں

اپنا تبصرہ بھیجیں