اداریہ: کرپشن ناقابل برداشت، مگر کیسے؟ - Baithak News

اداریہ: کرپشن ناقابل برداشت، مگر کیسے؟

روزنامہ” بیٹھک“ ملتان میں شائع ہونے والی ایک رپورٹ کے مطابق سینئر ممبر بورڈ آف ریونیو پنجاب بابر حیات تارڑ نے لیہ دورہ کے دوران انکشاف کیا ہے کہ محکمہ مال میں کرپشن پر 450 سرکاری ملازمین کو برطرف کیا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کرپشن پر نو ٹالرینس پالیسی پر عمل پیرا ہے۔ کرپشن کے ناسور نے معاشرے کو کھوکھلا کر کے رکھ دیا ہے۔ حکومت کی طرف سے ہر گزرے دن کرپشن کے خاتمے کی باتیں کی جاتی رہتی ہیں۔ سرکاری اداروں بالخصوص محکمہ انٹی کرپشن کی کاروائیاں جن میں زیادہ تر گرفتاریاں چھوٹے ملازمین کی ہوتی ہیں منظر عام پر آتی رہتی ہیں مگر بڑی مچھلیوں پر ہاتھ ڈالنے کی کوئی خبر سامنے نہیں آتی۔ کرپشن اس وقت ہر سرکاری ادارے میں عروج پر پہنچی ہوئی ہے۔ اگرچہ سرکاری اداروں میں نمایاں مقامات پر حدیث مبارکہ الراشی و المرتشی کلاہم فی النار ( رشوت لینے اور دینے والا جہنمی ہے) کنداں ہے لیکن اسی بینر تلے سرکاری ملازمین بلا خوف رشوت وصول کرنے میں مصروف عمل رہتے ہیں۔ رشوت کا چلن عام ہے۔ اگرچہ ملک میں انٹی کرپشن قوانین نافذ ہیں لیکن انسدادِ رشوت ستانی کے محکمہ کی کارکردگی بھی سوالیہ نشان ہے۔ اس محکمہ نے کبھی بڑی مچھلی نہیں پکڑی۔ اس کا سارا زور صرف کلرک اور پٹواری اور اے ایس آئی لیول تک کے اہلکاروں پر ریڈ کرنا اور ان کو پکڑنا رہ گیا ہے۔ کسی اعلی سرکاری عہدے دار پر ہاتھ ڈالنا شاید اس محکمہ کے بس کی بات نہیں ہے۔ اینٹی کرپشن کی کارکردگی رپورٹ بھی ایسا کوئی ریکارڈ نہیں رکھتی کہ جس پر فخر کیا جا سکے۔ اس محکمے کے حوالے سے یہ بات بھی زبان زد عام ہے کہ رشوت لے کے پھنس گیا ہے رشوت دے کے چھوٹ جاتا ہے۔ کیا ایسے کرپشن کے ناسور سے ملک کے اللہ راسی عوام کو چھٹکارا مل سکے گا۔ سرکاری اداروں میں فائلیں محض رشوت ستانی اور ناجائز طور پر رقم اینٹھنے کے لیے روک لی جاتی ہیں اور پھر فائل پاس کرنے کے لیے رقم لی جاتی ہے۔ سرکاری اداروں میں راشی ملازمین پکڑے جانے کے بعد کچھ عرصہ معطل رہ کر پھر بحال ہوجاتے ہیں جس سے عوام کا کرپشن کی تحقیقات اور کارروائیوں پر اعتماد نہیں رہا۔ جبکہ ملازمین بھی ان چھاپوں کو روٹین کی کارروائی سمجھ کر بے حس ہو چکے ہیں، ضرورت اس امر کی ہے کہ حکومت ملک سے کرپشن کے ناسور کو جڑ سے ختم کرنے کے لیے ٹھوس اور عملی اقدامات کرے اور کرپشن پر زیرو ٹالرینس پالیسی پر عمل درآمد کو یقینی بنائے، راشی ملازمین کو نشان عبرت بنا کر ہی اس مسئلہ سے مستقل چھٹکارا ممکن ہے۔

مزید جانیں

مزید پڑھیں

صارفین کو ریلیف کی فراہمی کیلئے اقدامات اُٹھائے جارہے ہیں:محمد ارشد

حکومت پنجاب کی ہدایت پراشیاء ضروریہ کی مقررہ نرخوں پرفراہمی کو یقینی بنایاجائے لیہ( بیٹھک رپورٹ )ضلع میں صارفین کو ریلیف کی فراہمی کے لئے اقدامات اُٹھائے جارہے ہیں تاکہ صارفین کو سستی اشیاء خورد نوش فراہم کی جاسکیںاس سلسلہ مزید پڑھیں

اپنا تبصرہ بھیجیں