ریلوے آپریشنل سٹاف کم،انتظامیہ کا رویہ غیرذمہ دارانہ: سمپارس یونین - Baithak News

ریلوے آپریشنل سٹاف کم،انتظامیہ کا رویہ غیرذمہ دارانہ: سمپارس یونین

ملتان(خبرنگارخصوصی)پاکستان ریلوے سمپارس یونین ملتان ڈویژن کا اجلاس زیرصدارت صدر سمپارس ملتان ڈویژن سعید خان بلوچ ہو۔ا اجلاس میں سرپرست اعلیٰ رفیق خان، ڈویژنل آرگنائزر حاجی غلام سرور چانڈیہ، حضور بخش خان اور محمد اسلم خان نے شرکت کی۔ اجلاس کے بعد میڈیا کو جاری بیان میں سیکرٹری اطلاعات اسلم خان نے کہا کہ ملتان ڈویژن عرصہ دراز سے سٹیشن ماسٹرز اور ماتحت آپریشنل سٹاف کی بدترین کمی کاشکارہے۔2017ءمیں آخری مرتبہ اے ایس ایمز کی بھرتی کی گئی۔ سٹیشن ماسٹرز اور اسسٹنٹ سٹیشن ماسٹرز بغیر کسی ریسٹ اور چھٹی کے مسلسل ایکسٹرا اور آپریشنل ڈیوٹیز کرنے پر مجبور ہیں۔ ملازمین کی کمی کی وجہ سے موجودہ آپریشنل حالات بد سے بدترین ہوتے جارہے ہیں۔ ریلوے انتظامیہ اس سلسلے میں انتہائی غیر ذمہ درانہ رویہ اپنائے ہوئے ہے۔ آپریشنل سٹاف بغیر ریسٹ ڈیوٹی کی وجہ سے انتہائی ذہنی دباؤ کا شکار ہے۔ سٹیشن ماسٹرز ریلوے کی اہم ترین کیٹیگری ہے۔ سٹیشن ماسٹرز کےلئے بھرتی کے بعد بھی ایک سالہ محکمانہ ٹریننگ کورس کی ضرورت ہوتی ہے۔ اسکے باوجود تاحال سٹیشن ماسٹرز کی بھرتی کےلئے کوئی اقدامات نہیں کئے گئے۔ ریلوے انتظامیہ کو بروقت آگاہ کر رہے ہیں کہ اس وقت ملتان ڈویژن میں سٹیشن ماسٹر کیٹیگری میں 120سے زائد کی کمی ہے۔ یونین کی جانب سے بارہا اس سلسلے میں تحریری درخواست دی جا چکی ہے لیکن کوئی شنوائی نہیں ہوئی۔ سٹیشن ماسٹرز اور دیگر آپریشنل سٹاف کی کمی کی وجہ سے مستقبل قریب میں ٹرین آپریشن جاری رکھنا ناممکن ہوجائے گا۔اسکی تمام تر ذمہ داری ریلوے انتظامیہ کی لاپرواہی پر ہوگی لہذامعاملات کی سنگینی کو مد نظر رکھتے ہوئے فوری طور پر سٹیشن ماسٹرز اور ماتحت آپریشنل سٹاف پوائنٹس مین،کیبن مین اور شنٹنگ سٹاف بھرتی کیا جائے تاکہ محفوظ ٹرین آپریشن کسی بھی طرح کے تعطل کا شکار نہ ہو۔

مزید جانیں

مزید پڑھیں

صارفین کو ریلیف کی فراہمی کیلئے اقدامات اُٹھائے جارہے ہیں:محمد ارشد

حکومت پنجاب کی ہدایت پراشیاء ضروریہ کی مقررہ نرخوں پرفراہمی کو یقینی بنایاجائے لیہ( بیٹھک رپورٹ )ضلع میں صارفین کو ریلیف کی فراہمی کے لئے اقدامات اُٹھائے جارہے ہیں تاکہ صارفین کو سستی اشیاء خورد نوش فراہم کی جاسکیںاس سلسلہ مزید پڑھیں

اپنا تبصرہ بھیجیں