شاہ کے وفاداروں نے ایم ڈی اے کی ساری پونجی مدنی چوک برج منصوبے پر لگوادی - Baithak News

شاہ کے وفاداروں نے ایم ڈی اے کی ساری پونجی مدنی چوک برج منصوبے پر لگوادی

سٹی ڈویلپمنٹ ایکٹ کے تحت وفاق اور صوبہ فنڈنگ کے پابند،شاہ محمودنے کہیں سے پیسے نہ ملنے پرایم ڈی اے کی کمائی نکلوالی
شاہ محمودنے منصوبے کا کریڈٹ دےکر وزیر اعلیٰ کو بھی خوش کردیا،ایم ڈی اے کےلئے عوامی مفاد کی سکیمیں شروع کرنابھی مشکل ہوگیا
ملتان(رپورٹ:- ارشد بٹ)شاہ کے وفاداروں نے ایم ڈی اے کی روزی مدنی چوک برج منصوبے میں جھونک دی ۔پنجاب حکومت نے سڑک کے آرپار نیوملتان کے دو حصوں کو آپس میں ملانے کےلئے مدنی چوک اوور ہیڈ برج تعمیر کرنے کے منصوبے میں ایم ڈی اے کی سیلف انکم کے کھاتے میں موجود فنڈز اس منصوبے کےلئے ٹرانسفر کرکے ایم ڈی اے کو 40 کروڑ آمدن سے محروم کردیا ہے۔ سٹی ڈویلپمنٹ ایکٹ کے تحت پنجاب کے تمام ترقیاتی اداروں کے زیر نگرانی تعمیر ہونے والے تمام میگا پراجیکٹس کے لئے وفاق اور صوبہ فنڈذ جاری کرنے کا پابند ہیں۔ اسکی واضح مثال ملتان شہر میں تعمیر ہونے والے فلائی اوورز ، انڈرپاس،اوور ہیڈ برج کے فنڈز وفاق میں پی پی پی اور پنجاب میں مسلم لیگ ن کی حکومت نےبرابری کی بنیاد پر ادا کئے ان منصوبوں کےلئے ایم ڈی اے کی سیلف انکم سے ایک پائی بھی نہیں لی گئی مگر موجودہ حکومت کے وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے وفاق اور صوبے سے اس منصوبے کےلئے فنڈذ جاری کرانے میں ناکامی کے بعد پنجاب حکومت سے دباو¿ ڈلواکر اور اپنا ذاتی اثرورسوخ استعمال کرکے اس منصوبے کےلئے ایم ڈی اے کی سیلف انکم سے فنڈز جاری کروادیئے ۔اسکے لئے شاہ محمود قریشی نے مقامی انتظامیہ کے اعلیٰ افسروں کو بھی فنڈز کے اجراءکےلئے ایم ڈی اے پر دباو¿ ڈالنے کےلئے استعمال کیا۔اس منصوبے کی تعمیر کے لئے علاقے کے عوام کئی سالوں سے سراپا احتجاج تھے. یہ علاقہ انتخابی حلقے میں واقع ہونے کے لئے شاہ محمود قریشی نے اس منصوبے کو حلقے میں اپنی سیاسی پوزیشن مضبوط بنانے کے لئے استعمال کیا اور عوام سے اس کے جلد تعمیر کرانے کا وعدہ کیا شاہ محمود نے اس منصوبے کو اپنی حکومت کے دور کے ختم ہونے سے مکمل کرانے کے لئے تاخیر کے خدشے کے پیش نظر وفاق اور پنجاب پر فنڈز کے لئے انحصار کرنے کی بجائے آسان حدف اور راستہ استعمال کرنے کے لئے ایم ڈی اے کی سیلف انکم سے فنڈز ٹرانسفر کرانے کا فیصلہ کیا اور یہ منصوبہ شروع کرادیا جو کہ اب تکمیل کے آخری مراحل میں ہے جبکہ دوسری شاہ محمود نے اس منصوبے کا سارا کریڈٹ پنجاب حکومت کو دے کر وزیر اعلیٰ کو بھی خوش کردیا حالانکہ یہ منصوبہ ایم ڈی اے کے فنڈز سے شروع ہوا.سیلف انکم سے 40 کروڑ روپے کے فنڈز اس منصوبے کےلئے ٹرانسفر کراکے شاہ محمود نے اپنا ذاتی سیاسی مفاد تو حاصل کر لیا مگر دوسری طرف سیلف انکم سے تنخواہ اور پینشن وصول کرنے والے ملازمین کو خزانہ خالی ہونے پر شدید مشکلات سے دوچار کر دیا اسطرح 6 سو سے زائد ملازمین کے اجتماعی مفاد پر انفرادی سیاسی مفاد کو ترجیح دی گئی سیلف انکم کے فنڈز ختم ہونے سے ایم ڈی اے کےلئے شہر کے لئے عوامی مفاد کی سکیمیں شروع کرنا بھی مشکل ہوگیا ہے۔

مزید جانیں

مزید پڑھیں

صارفین کو ریلیف کی فراہمی کیلئے اقدامات اُٹھائے جارہے ہیں:محمد ارشد

حکومت پنجاب کی ہدایت پراشیاء ضروریہ کی مقررہ نرخوں پرفراہمی کو یقینی بنایاجائے لیہ( بیٹھک رپورٹ )ضلع میں صارفین کو ریلیف کی فراہمی کے لئے اقدامات اُٹھائے جارہے ہیں تاکہ صارفین کو سستی اشیاء خورد نوش فراہم کی جاسکیںاس سلسلہ مزید پڑھیں

اپنا تبصرہ بھیجیں