شجرکاری ماحولیاتی آلودگی کے خاتمے کا قدرتی حل ہے: سید موسیٰ رضا - Baithak News

شجرکاری ماحولیاتی آلودگی کے خاتمے کا قدرتی حل ہے: سید موسیٰ رضا

مظفرگڑھ (بیٹھک رپورٹ) ڈپٹی کمشنر سید موسیٰ رضا نے کہا ہے کہ ماحولیاتی آلودگی عالمی مسئلہ بن چکا ہے، زمین کا درجہ حرارت بڑھ رہا ہے جس سے قدرتی ماحول میں تبدیلیاں پیدا ہورہی ہیں، جن کا حل صرف اور صرف زیادہ سے زیادہ شجر کاری ہے، شجرکاری نہ صرف قدرتی آفات سے محفوظ بناتی ہے بلکہ ماحولیاتی آلودگی کے خاتمے کا قدرتی حل بھی ہے یہ بات انہوں نے موسم بہار کی شجر کاری مہم کے سلسلے میں ایک اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کہی۔ اجلاس میں ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر جنرل احسان الحق، ڈی ایف او اعجاز احمد، ڈسٹرکٹ آفیسر بہبود آبادی فرزانہ کوثر، سول ڈیفنس آفیسر سحرش ارشاد سمیت محکمہ پولیس، محکمہ صحت، محکمہ تعلیم، محکمہ زراعت اور دیگر متعلقہ محکموں کے افسران نے شرکت کی۔ڈپٹی کمشنر سید موسیٰ رضا نے کہا کہ شجر کاری کیلئے مناسب جگہ کا انتخاب کیا جائے پانی کی فراہمی کو یقینی بنایا جائے، جہاں بھی پودے لگائے ان کا خیال رکھا جائے تاکہ مطلوبہ مقاصد کو حاصل کیا جاسکے۔ انہوں کہا کہ شجر کاری مہم کو کامیاب بنانے کیلئے پرائیویٹ سیکٹر کی معاونت حاصل کی جائے، عوام میں زیادہ سے زیادہ شجر کاری کا شعور بیدار کیا جائے اور پودوں کی فراہمی کو یقینی بنایا جائے۔ انہوں نے عوام سے بھی اپیل کی کہ وہ محکمہ جنگلات کی نرسریوں سے صرف 2روپے کا پودا خریدیں اور اپنے گھروں، زرعی اراضی اور دیگر مقامات پرپودے لگائیں اور شجر کاری مہم میں بڑھ چڑھ کر حصہ لیں اور اپنے ملک کو سر سبز بنائیں۔ اجلاس میں ڈی ایف او اعجاز احمد نے بتایا کہ موسم بہارں کی شجرکاری کے دوران پرائیویٹ سیکٹر کے ساتھ مل کر ضلع بھر میں 30لاکھ 75ہزار پودے لگائے جائیں گے۔
انہوں نے بتایا کہ محکمہ جنگلات کی 654ایکٹر اراضی پر شجری کاری کی گئی تھی۔2019میں لگائے گئے پودے جنگلات کی شکل اختیار کرچکے ہیں، جن میں چھینا ملانہ کا جنگل، بیت میر ہزار کا جنگل، ڈمر والا کا جنگل، باقر شاہ کا جنگل، خیر پور پاڑا کا جنگل، بکائنی اور ڈھاکہ کے جنگلات شامل ہیں۔

مزید جانیں

مزید پڑھیں

صارفین کو ریلیف کی فراہمی کیلئے اقدامات اُٹھائے جارہے ہیں:محمد ارشد

حکومت پنجاب کی ہدایت پراشیاء ضروریہ کی مقررہ نرخوں پرفراہمی کو یقینی بنایاجائے لیہ( بیٹھک رپورٹ )ضلع میں صارفین کو ریلیف کی فراہمی کے لئے اقدامات اُٹھائے جارہے ہیں تاکہ صارفین کو سستی اشیاء خورد نوش فراہم کی جاسکیںاس سلسلہ مزید پڑھیں

اپنا تبصرہ بھیجیں