شمالی کوریا کے میزائل تجربات: 2017 کے بعد سب سے بڑا تجربہ - Baithak News

شمالی کوریا کے میزائل تجربات: 2017 کے بعد سب سے بڑا تجربہ

شمالی کوریا نے ایسا تجربہ کیا ہے جسے 2017 کے بعد سے اس کا سب سے بڑا میزائل تجربہ سمجھا جاتا ہے۔

یہ ہتھیار بظاہر درمیانی فاصلے تک مار کرنے والا میزائل تھا جو جاپان کے سمندر میں گرنے سے پہلے 2000 کلومیٹر کی بلندی تک پہنچ گیا۔

جاپان، جنوبی کوریا اور امریکہ سبھی نے اس لانچ کی مذمت کی ہے، جو اس مہینے کا ساتواں تجربہ ہے۔

اقوام متحدہ نے شمالی کوریا کو بیلسٹک اور جوہری ہتھیاروں کے تجربات سے منع کیا ہے اور اس پر سخت پابندیاں عائد کر دی ہیں۔

لیکن مشرقی ایشیائی ریاست باقاعدگی سے پابندی سے انکار کرتی ہے، اور رہنما کم جونگ اُن نے اپنے ملک کے دفاع کو تقویت دینے کا عزم کیا ہے۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ لانچوں کی رفتار کے پیچھے متعدد وجوہات ہیں، جن میں عالمی اور علاقائی طاقتوں کو طاقت کا سیاسی اشارہ، کم جونگ ان کی جانب سے طویل عرصے سے تعطل کا شکار جوہری مذاکرات کے لیے امریکا پر دباؤ ڈالنے کی خواہش اور نئی انجینئرنگ کو آزمانے کی عملی ضرورت بھی شامل ہے۔ اور فوجی کمانڈ سسٹم۔
چین میں سرمائی اولمپکس سے عین پہلے اور مارچ میں جنوبی کوریا کے صدارتی انتخابات سے پہلے آنے والے وقت کو بھی اہم سمجھا جاتا ہے۔

اور ٹیسٹوں میں بھی اضافہ ہوا ہے کیونکہ امریکہ کی زیرقیادت پابندیوں، وبائی امراض سے متعلق مشکلات اور کئی دہائیوں کی بدانتظامی کے تحت گرتی ہوئی شمالی کوریا کی معیشت جدوجہد کر رہی ہے۔

مزید جانیں

مزید پڑھیں

صارفین کو ریلیف کی فراہمی کیلئے اقدامات اُٹھائے جارہے ہیں:محمد ارشد

حکومت پنجاب کی ہدایت پراشیاء ضروریہ کی مقررہ نرخوں پرفراہمی کو یقینی بنایاجائے لیہ( بیٹھک رپورٹ )ضلع میں صارفین کو ریلیف کی فراہمی کے لئے اقدامات اُٹھائے جارہے ہیں تاکہ صارفین کو سستی اشیاء خورد نوش فراہم کی جاسکیںاس سلسلہ مزید پڑھیں

اپنا تبصرہ بھیجیں