فٹبال ورلڈ کپ 2022: کیا قطر سٹیڈیمز میں شراب پر پابندی لگانے والا واحد ملک ہے؟ - Baithak News

فٹبال ورلڈ کپ 2022: کیا قطر سٹیڈیمز میں شراب پر پابندی لگانے والا واحد ملک ہے؟

ایکواڈور کے مداح ہوزے نے اپنی ٹیم کا میچ دیکھنے کے بعد واپس جاتے ہوئے ورلڈ کپ سٹیڈیمز میں بیئر پر پابندی کے بارے میں کہا: ’بہت مایوس کن۔‘

ایمیلیو کہتے ہیں کہ ’مجھے یہ ملا ہے جس میں زیرو (الکوحل) ہے، مگر کم از کم مجھے اس کا ذائقہ تو ملا۔‘ قطر میں سٹیڈیمز میں شراب کی فروخت پر پابندی کا آخری لمحات میں ہونے والا فیصلہ الکوحل سے متعلق فیفا کی لڑائیوں کے سلسلے کی تازہ ترین کڑی ہے۔
گذشتہ کئی ورلڈ کپس میں سپانسرشپ پر تنازعے میں فیفا کی گورننگ باڈی پر کالونیل ازم اور پیسے کو مداحوں کے تحفظ پر ترجیح دینے کا الزام عائد کیا گیا ہے۔ حالانکہ فیفا حال ہی میں میزبان ممالک کو الکوحل پیش کرنے پر قائل کرتی رہی ہے مگر یہ بین الاقوامی تنظیم پہلے مطالبہ کیا کرتی تھی کہ سٹیڈیمز میں شراب پر پابندی رہے۔
سنہ 2004 تک تمام بڑے ایونٹس کے لیے اس کے ضوابط میں لکھا تھا کہ منتظمین گراؤنڈز میں الکوحل فروخت نہیں کر سکتے اور نشے کی حالت میں موجود شخص کو سٹیڈیم سے نکال دیا جائے گا۔
مگر اب اس کی جانب سے یہ پالیسی واپس لینے اور ورلڈ کپس کے میزبان ممالک کو ورلڈ کپس میں الکوحل کی فروخت پر قائل کرنے کی بھرپور کوششوں کے باعث کچھ ممالک اور اس کے درمیان تنازع پیدا ہو گیا ہے۔
سنہ 2014 میں ورلڈ کپ کی میزبانی برازیل کو دینا بہت موزوں معلوم ہوا تھا۔ فٹ بال کے لیے جنونی یہ لاطینی امریکی ملک پانچ مرتبہ یہ ٹورنامنٹ جیت چکا ہے اور بیئر یہاں بے حد مقبول ہے مگر کئی ممالک کی طرح برازیل کے مداحوں کا جوش بھی تشدد میں بدل جاتا ہے۔

پنجاب حکومت عمران خان کے لانگ مارچ کا حصہ نہیں بنے گی، وزیر داخلہ پنجاب

Shakira could face 8 years in jail

پاکستان میں صحت عامہ کی صورتحال تباہی کے دہانے پر ہے، عالمی ادارہ صحت

اپنا تبصرہ بھیجیں