فیفا ورلڈ کپ: پرتگال کے خلاف مراکش کی فتح کو اسلام سے جوڑنے پر بحث - Baithak News

فیفا ورلڈ کپ: پرتگال کے خلاف مراکش کی فتح کو اسلام سے جوڑنے پر بحث

مراکش نے ہفتے کی رات فیفا ورلڈ کپ میں تاریخ رقم کی۔ یہ ٹورنامنٹ میں سیمی فائنل تک پہنچنے والا پہلا افریقی ملک بن گیا ہے۔

مراکش نے سیمی فائنل میں پرتگال کو شکست دی جس میں کرسٹیانو رونالڈو، پیپے، برونو فرنانڈیز، برنارڈو سلوا اور روبن ڈیاس شامل تھے۔
ہفتے کو دوحہ کے التھامہ اسٹیڈیم میں مراکش کی فتح کے ساتھ ہی عرب اور افریقی ممالک میں جشن کا ماحول تھا۔ یہ فیفا ورلڈ کپ کی 92 سالہ تاریخ میں پہلی بار کسی افریقی ملک کے ٹاپ 4 تک پہنچنے کا جشن تھا۔
ہفتہ کو مراکش نے کوارٹر فائنل میں پرتگال کو 1-0 سے شکست دی۔ اس فتح کے ساتھ ہی مراکش سیمی فائنل کھیلنے والا پہلا افریقی ملک بن گیا۔ پہلے ہاف میں مراکش کے اسٹرائیکر یوسف النصاری کے گول نے ٹیم کو سیمی فائنل میں پہنچا دیا۔
مراکش کی فتح کے بعد جشن منانے کے کئی مناظر منظر عام پر آ رہے ہیں لیکن ایک منظر جس کا سب سے زیادہ چرچا ہے وہ ہے مراکش کے ونگر صوفیانے بوفل اور ان کی والدہ کا میدان میں خوشی سے رقص۔
اپنی ماں کے ساتھ ایک تصویر شیئر کرتے ہوئے بوفل نے لکھا – اللہ دینے والا ہے، الحمدللہ۔
اس سے قبل گروپ میچ میں بیلجیئم کو شکست دینے کے بعد مراکش کے سٹار اشرف حکیمی کی سٹیڈیم میں اپنی والدہ سے گلے ملنے کی ویڈیو کا سوشل میڈیا پر خوب چرچا ہوا۔مراکش کی جیت ایک انڈر ڈاگ ملک کی جیت ہے اور ایسی ٹیمیں اپنے کندھوں پر ملک کی پہچان اور کھیل کو قانونی حیثیت دلانے کا بوجھ بھی اٹھاتی ہیں۔
پنجاب حکومت عمران خان کے لانگ مارچ کا حصہ نہیں بنے گی، وزیر داخلہ پنجاب

Shakira could face 8 years in jail

پاکستان میں صحت عامہ کی صورتحال تباہی کے دہانے پر ہے، عالمی ادارہ صحت

اپنا تبصرہ بھیجیں