لانگ مارچ میں 25 سے 30 ہزار لوگ بلاول کیساتھ سفر کرینگے: گیلانی - Baithak News

لانگ مارچ میں 25 سے 30 ہزار لوگ بلاول کیساتھ سفر کرینگے: گیلانی

ملتان ( سٹی رپورٹر) پاکستان پیپلزپارٹی کے مرکزی رہنماءاور سابق وزیر اعظم سید یوسف رضا گیلانی نے کہا ہے کہ ہم عدم اعتماد کریں گے جس کی ابتداءلانگ مارچ سے کر رہے ہیں، لانگ مارچ اور عدم اعتماد میں ایسے ایسے چہرے دیکھیں گے کہ یہ پریشان ہو جائیں گے۔ لانگ مارچ میں 25 سے30 ہزار لوگ بلاول کے ساتھ سفر کریں گے، انہوں نے ملتان میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ27 فروری کوعوامی مارچ ہوگا، لانگ مارچ میں لاکھوں لوگ بلاول بھٹو کا ساتھ دیں گے، لانگ مارچ میں 25 سے30 ہزار لوگ بلاول کے ساتھ سفر کررہے ہوں گے، لانگ مارچ میں ایسے لوگ ہوں گے جن کو دیکھ کر سب حیران رہ جائیں گے یوسف رضا گیلانی نے کہا کہ پیکا ایکٹ کے خلاف سینیٹ میں آواز اٹھائی،آرڈیننس کے ذریعے کالے قوانین کو مسترد کرتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کی بوکھلاہٹ سے ہم کامیاب ہو گئے ہیں۔ سندھ میں گورنر راج کی کوئی ضرورت نہیں، یہ سندھ میں مارچ کی بات کر رہے ہیں جبکہ ہم کسی ایک صوبے تک محدود نہیں، ہم ملک گیر مارچ کے ذریعے عوام کی جنگ لڑ رہے ہیں اور ہمارے ایجنڈے پر اپوزیشن ایک ہے۔انہوں نے کہا کہ حکومت اپنا کوئی وعدہ پورا نہیں کر سکی، عوام مہنگائی کی چکی میں پس رہے ہیں اور حکومت کے خلاف لانگ مارچ چاہتے ہیں۔ جو حکومت اپنے منشور پر عملدرامد نہ کرا سکے اس کی گیم ختم ہو جاتی ہے۔ اسی لئے ہم نے ملک گیر کال دی ہے۔انہوں نے کہا کہ ہم 27 فروری کو عوامی مارچ کر رہے ہیں، 2 مارچ کو عوامی مارچ صادق آباد جبکہ 3 مارچ کو ملتان پہنچے گا۔ پیکا ایکٹ کے خلاف ہم نے سینٹ میں آواز اٹھائی، آرڈیننس کے ذریعے اس قسم کے کالے قوانین کو مسترد کرتے ہیں۔ ہمارے تمام سیاسی جماعتوں سے مذاکرات جاری ہیں، پیپلزپارٹی کے سیلاب کے سامنے کوئی کھڑا نہیں ہو سکے گا۔ بلاول بھٹو زرداری کا ملتان میں فقید المثال استقبال کریں گے، ملتان کی عوام ثابت کرے گی کہ ملتان کس کا ہے۔انہوں نے کہا کہ روس اور یوکرائن تنازعے میں ہمیں بیلنس پالیسی اختیار کرنی چاہئے

مزید جانیں

مزید پڑھیں

صارفین کو ریلیف کی فراہمی کیلئے اقدامات اُٹھائے جارہے ہیں:محمد ارشد

حکومت پنجاب کی ہدایت پراشیاء ضروریہ کی مقررہ نرخوں پرفراہمی کو یقینی بنایاجائے لیہ( بیٹھک رپورٹ )ضلع میں صارفین کو ریلیف کی فراہمی کے لئے اقدامات اُٹھائے جارہے ہیں تاکہ صارفین کو سستی اشیاء خورد نوش فراہم کی جاسکیںاس سلسلہ مزید پڑھیں

اپنا تبصرہ بھیجیں