ہمیں پاکستان پر نظر رکھنی چاہیے۔ - Baithak News

ہمیں پاکستان پر نظر رکھنی چاہیے۔

حال ہی میں، میں نے پڑھا کہ پاکستان، جو کہ گارمنٹس اور ٹیکسٹائل کی پیداوار میں بنگلہ دیش کا ایک بڑا حریف ہے، نے ٹیکسٹائل کی ریکارڈ برآمدات کو نقصان پہنچایا ہے۔ ملک نے مالی سال 2021-22 میں ٹیکسٹائل کی برآمدات میں سال بہ سال 40 فیصد اضافہ کرکے 21 بلین امریکی ڈالر کی سطح پر پہنچا دیا۔

پاکستان کے اقتصادی مشیر اب تجویز کر رہے ہیں کہ اگلے مالی سال میں یہ تعداد بڑھ کر 26 بلین امریکی ڈالر تک پہنچ جائے گی، اور ملک کی ٹیکسٹائل برآمدات کو وبائی امراض سے پہلے کی سطح سے بہت آگے لے جائے گی۔ اس اضافے کی وجہ کیا ہے، اور کیا بنگلہ دیش کو تشویش ہونی چاہیے؟

یہاں پر غور کرنے کے لیے کئی مسائل ہیں۔ پاکستان ان ہی برآمدی منڈیوں کو نشانہ بنا رہا ہے جیسا کہ ہم ہیں یعنی امریکہ اور یورپی یونین کے علاوہ برطانیہ۔ میں نے حال ہی میں سوشل میڈیا پر کسی کو لباس کی برآمدات کے حوالے سے بنگلہ دیش، پاکستان اور بھارت کا موازنہ کرتے ہوئے دیکھا، اور یہ تجویز کیا کہ وبا کے دوران پاکستان واضح رہنما رہا ہے۔

اس کی ایک وجہ ہے۔ 2020 کے اوائل میں وبائی بیماری کے پہلی بار سامنے آنے کے بعد پاکستان میں فیکٹریاں بنگلہ دیش اور ہندوستان سے پہلے دوبارہ کھل گئیں، اور جب ہماری فیکٹریاں بند ہو گئیں تو وہ عالمی فیشن برانڈز سے آرڈر حاصل کرنے میں کامیاب ہوئیں۔ کچھ آرڈر ہم اور انڈیا سے پاکستان شفٹ ہوئے۔ اس نے کہا، 2021 کے آخری نصف میں، بنگلہ دیش کے RMG سیکٹر نے مضبوطی سے ترقی کی اور ریکارڈ کی مضبوط ترین سہ ماہی کے ساتھ سال کا اختتام کیا۔

مزید جانیں

مزید پڑھیں

صارفین کو ریلیف کی فراہمی کیلئے اقدامات اُٹھائے جارہے ہیں:محمد ارشد

حکومت پنجاب کی ہدایت پراشیاء ضروریہ کی مقررہ نرخوں پرفراہمی کو یقینی بنایاجائے لیہ( بیٹھک رپورٹ )ضلع میں صارفین کو ریلیف کی فراہمی کے لئے اقدامات اُٹھائے جارہے ہیں تاکہ صارفین کو سستی اشیاء خورد نوش فراہم کی جاسکیںاس سلسلہ مزید پڑھیں

اپنا تبصرہ بھیجیں