56 لاکھ16ہزار623گانٹھ کپاس کی فیکٹریوں میں آمد - Baithak News

56 لاکھ16ہزار623گانٹھ کپاس کی فیکٹریوں میں آمد

ملتان(وقائع نگار) پاکستان کاٹن جنرز ایسوسی ایشن (پی سی جی اے)نے کپاس کی فیکٹریوں میں آمد کے اعدادو شمار جاری کر دیئے ہیں جسکے مطابق 15فروری2022تک ملک کی جننگ فیکٹریوں میں 74لاکھ 34ہزار 991 گانٹھ کپاس آئی۔15 فروری2021تک 56 لاکھ16ہزار623گانٹھ کپاس فیکٹریوں میں آئی تھی۔گزشتہ سال کی اسی مدت کے مقابلے میں 18لاکھ 18ہزار368گانٹھ کپاس فیکٹریوں میں زائدآئی ہے۔ اضافے کی شرح 32.37فیصد رہی۔ صوبہ پنجاب کی فیکٹریوں میں 39لاکھ 22 ہزار 48 گانٹھ کپاس آئی ہے جو گذشتہ سال کی اسی مدت میں فیکٹریوں میں آنے والی فصل34لاکھ 80ہزار454گانٹھ کپاس سے 4لاکھ41 ہزار 594گانٹھ زائدہے۔ پنجاب میں اضافے کی شرح12.69فیصد رہی۔صوبہ سندھ کی فیکٹریوں میں 35لاکھ 12 ہزار 943گانٹھ کپاس فیکٹریوں میں آئی ہے جو کہ گذشتہ سال اسی مدت میں فیکٹریوں میں آنے والی فصل21لاکھ36 ہزار169گانٹھ کپاس سے 13لاکھ76 ہزار 774 گانٹھ زائد ہے۔

صوبہ سندھ میں اضافے کی شرح 64.45د رہی۔ 15فروری 2022 تک فیکٹریوں میں آنے والی کپاس سے74 لاکھ 30ہزار287گانٹھ روئی تیار کی گئی۔ ملک میں 17جننگ فیکٹریاں آپریشنل ہیں۔ ایکسپورٹرز نے رواں سیزن میں 16ہزارگانٹھ روئی خرید کی ہے جبکہ ٹیکسٹائل سیکٹرنے 72لاکھ 95ہزار374 گانٹھ روئی خرید کی ہے۔ ٹریڈنگ کارپوریشن آف پاکستان(TCP)نے کاٹن سیزن 2021-22 میں خریداری نہیں کی ہے۔ صوبہ پنجاب میں 16جننگ فیکٹریاں آپریشنل ہیں او ر39لاکھ 17 ہزار409گانٹھ روئی تیار کی گئی ہے۔ ضلع ملتان میں 15فروری2022تک 72 ہزار 280 گانٹھ کپاس،ضلع لودھراں میں 88ہزار 203 گانٹھ کپاس،ضلع خانیوال میں 2لاکھ30ہزار 18 گانٹھ کپاس، ضلع مظفر گڑھ میں 1لاکھ16 ہزار 220گانٹھ کپاس،ضلع ڈیرہ غازی خان میں 3لاکھ 25ہزار626گانٹھ کپاس، ضلع راجن پور میں 96ہزار510گانٹھ کپاس ضلع لیہ میں 1لاکھ 91 ہزار536گانٹھ کپاس،ضلع وہاڑی میں 1لاکھ 2 ہزار 964گانٹھ کپاس، ضلع ساہیوال میں 1لاکھ60ہزار461گانٹھ کپاس، ضلع رحیم یار خان میں 6لاکھ68ہزار763گانٹھ کپاس،ضلع بہاولپور میں 5لاکھ 24ہزار250گانٹھ کپاس، ضلع بہاولنگر میں 11لاکھ28ہزار798گانٹھ کپاس فیکٹریوں میں آئی ہے۔ ضلع سانگھڑمیں 13لاکھ19ہزار 644گانٹھ کپاس، ضلع میر پور خاص میں 79 ہزار 193 گانٹھ کپاس، ضلع نواب شاہ میں 1لاکھ88ہزار516گانٹھ کپاس، ضلع نو شہرو فیروز میں 3لاکھ7 ہزار994 گانٹھ کپاس، ضلع خیر پور میں 3لاکھ46ہزار551گانٹھ کپاس، ضلع سکھر میں 5لاکھ39ہزار773گانٹھ کپاس، ضلع جام شورومیں 68 ہزار800گانٹھ کپاس اور ضلع حیدرآباد میں 1لاکھ51 ہزار473 گانٹھ کپاس اور صوبہ بلوچستان میں 1لاکھ 45ہزار 570 گانٹھ فیکٹریوں میں آئی ہے۔ غیر فروخت شدہ سٹاک1لاکھ23 ہزار617گانٹھ کپاس اور روئی موجود ہے۔

مزید جانیں

مزید پڑھیں

صارفین کو ریلیف کی فراہمی کیلئے اقدامات اُٹھائے جارہے ہیں:محمد ارشد

حکومت پنجاب کی ہدایت پراشیاء ضروریہ کی مقررہ نرخوں پرفراہمی کو یقینی بنایاجائے لیہ( بیٹھک رپورٹ )ضلع میں صارفین کو ریلیف کی فراہمی کے لئے اقدامات اُٹھائے جارہے ہیں تاکہ صارفین کو سستی اشیاء خورد نوش فراہم کی جاسکیںاس سلسلہ مزید پڑھیں

اپنا تبصرہ بھیجیں