ن لیگی حکومت آتے ہی زرعی گریجویٹس کے رقبوں پر قبضے - Baithak News

ن لیگی حکومت آتے ہی زرعی گریجویٹس کے رقبوں پر قبضے

2010میں کوٹ قیصرانی میں 94گریجویٹس کو الاٹ رقبوں پرمافیانے قبضہ کر کے فصلیں جلادیں، ڈی پی اوکا انکوائری کا حکم

تونسہ شریف (بیٹھک رپورٹ) 2010میں شہباز شریف نے 94زرعی گریجوایٹس کو9400 کنال رقبہ رکھ کوٹ قیصرانی میں الاٹ کیاتھا۔اس سرکاری رقبہ پر قیصرانی قوم قابض ہے کل رقبہ 57545 کنال ہے پی ٹی آئی حکومت 80 گریجوایٹ کو قبضہ واپس دلاچکی ہے ۔پی ٹی آئی حکومت ختم ہونے پرقبضہ مافیانے دوبارہ گندم کی فصل سمیت الاٹ شدہ رقبہ پر قبضہ کرلیااورفصل کی باقیات کوآگ لگادی ۔خبر جب میڈیا پر وائرل ہوئی تو ڈی پی او ڈیرہ غازی خان محمد علی وسیم واقع کا نوٹس لے لیا اور تمام معاملہ کی انکوائری کا حکم دیدیا ۔

وقوعہ کے متعلق تھانہ ریتڑہ میں مقدمہ نمبر 103/21 اورمقدمہ نمبر 104/21 درج کر دئیے گئے ہیں ۔پولیس کی نفری تعینات کرتے ہوئے گشت بڑھا دیا گیا۔ڈی پی او محمد علی وسیم کی ہدایت پر ایس پی انویسٹی گیشن غیور احمد خان کی سربراہی میں انکوائری کمیٹی بھی تشکیل دیدی گئی ہے۔انکوائری کمیٹی قانون کے تقاضے پورے کرتے ہوئے میرٹ پر انکوائری کر کے مزید کاروائی عمل میں لائیگی۔ن لیگ کی حکومت واپس آتے ہی لیگی رہنماکھل کھیلنے لگے ۔

زرعی گریجویٹس کو الاٹ شدہ سرکاری اراضی پر ن لیگی رہنما سابق ایم پی اے تونسہ میر بادشاہ قیصرانی کی دوبارہ قبضے کی دھمکی۔ الاٹ شدہ اراضی پر کاشت گندم کو قابضین نے اپنی تحویل میں لیکر باقیات کو آگ لگا دی گئی اس موقع پرحلقہ پی پی 285سے پی ٹی آئی کے مقامی ایم پی اے خواجہ حافظ محمد داؤد سلیمانی نے میڈیاسے گفتگوکرتے ہوئے کہاکہ زرعی گریجوایٹس کی ہر ممکن قانونی معاونت کی جائیگی۔شہباز شریف کیجانب سے زرعی گریجویٹس کو الاٹ کی گئی اراضی گزشتہ حکومت نے میر بادشاہ کے قبضے سے واگزارکرائی اور تونسہ کے زرعی گریجویٹس کو قبضہ دیدیا گیا جس پر زرعی گریجویٹس نے گندم کاشت کی جسے گزشتہ روز آگ لگادی دی گئی ۔زرعی گریجویٹس کیمطابق آگ لیگی رہنما سردار میر بادشاہ قیصرانی نے لگوائی جو اراضی پر قبضہ کرناچاہتاہے۔

دوئود سلیمانی کا کہنا تھا کہ یہ نوجوان ہمارے سٹوڈنٹس ہیں جن کو مسلم لیگ ن کے وقت زمین الاٹ ہوئی تھی یہ زمین بہت سے مقامی با اثر لوگوں کے پاس ہے ان کو قبضہ نہیں ملا تھا ۔عمران خان کا ایک ویژن تھا جو کسی کی ملکیت پر یا سرکاری املاک پر قبضہ ہے تو واگزار کرایا جائے۔ان نوجوانوں نے درخواستیں دیں عمران خان کی وجہ سے ان کو قبضہ مل گیا۔ ہم لاہور میں تھے چوہدری پرویز الٰہی والے مسئلے پر مجھے اطلاع ملی تو ان کی فصلات کو آگ لگا دی ۔

انکی جو بھی قانونی امداد ہے وہ ہمارا فرض بنتا ہے ہماراسے قانون کے مطابق جو بھی ہو گا ہم ان کی مدد کریں گے اور ہم انکے ساتھ ہیں۔ ان لوگوں نے زمین پربہت پیسے خرچ کئے ہیں ۔ اس مسئلے کو حل کریں۔ہم انکی مدد قانون کے مطابق ان کو سپورٹس کریں گے کیونکہ یہ گورنمنٹ کا رقبہ ہے ان کا جو بھی قانون رائٹ ہے ان کو دیا جائے۔گورنمنٹ آف پنجاب ایگریرین کے جنرل سیکرٹری زرعی گریجویٹ محمدآصف نے میڈیاسے گفتگومیں کہاکہ 2010میں شہباز شریف حکومت میں پنجاب کے ایگریرین کوسو سوکنال زمین الاٹ ہوئی تھی ہمارے تونسہ کے اندر بھی 94لوگوں کو بھی یہ زمینیں الاٹ ہوئی تھی جس کی ٹوٹل57545کنال ہے یہ ساری کی ساری زمین قبضہ مافیا کے ناجائز قبضہ میں تھی جس کو 2018،2019میں یہ پراسس شروع کیا تھا عمران خان حکومت نے اور یہ زمین آٹھ نو سال بعد ہم کو واپس کی تھی یہ پراسس چل رہا تھا دوران ہمارے لوگوں پر یہاں کے مقامی مسلم لیگ ن کے سردار ہے ہمارے اوپر دوبارہ اٹیک شروع کر دیا ہے ۔اور انہوں نے اپنے جلسوں میں بھی انہوں نے کہا کہ اپنی زمینیں واپس لیں گے ۔

ن لیگی رہنما میر بادشاہ قیصرانی کی قبضے کی دھمکی،زرعی گریجوایٹس کی ہر ممکن قانونی معاونت کی جائیگی: ایم پی اے دائودسلیمانی

اپنا تبصرہ بھیجیں