خیبرپختونخوا اسمبلی میں سینیٹ انتخابات ملتوی کرنے کا تحریری فیصلہ

“سینیٹ کی 30 خالی نشستوں پر ووٹنگ جاری ہے جو شام 4 بجے تک جاری رہے گی جب کہ خیبرپختونخوا اسمبلی میں سینیٹ کے انتخابات ملتوی کردیے گئے ہیں۔”
خیبرپختونخوا اسمبلی میں سینیٹ انتخابات کی تیاریاں مکمل، پولنگ عملہ بھی موجود تھا، تاہم سینیٹ انتخابات مقررہ وقت (9 بجے) پر اسمبلی میں شروع نہ ہوسکے۔ لیکن اپوزیشن نے سینیٹ انتخابات ملتوی کرنے کی درخواست جمع کرادی۔اپوزیشن کے احمد کریم کنڈی کی جانب سے صوبائی الیکشن کمشنر کو درخواست جمع کرائی گئی جس میں مؤقف اختیار کیا گیا کہ ہمارے 25 ارکان نے ابھی تک حلف نہیں اٹھایا اس لیے انتخابات ملتوی کیے جائیں۔اپوزیشن کی درخواست پر صوبائی الیکشن کمشنر نے چیف الیکشن کمشنر سے رابطہ کیا تھا جب کہ وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا علی امین گنڈا پور بھی صوبائی اسمبلی پہنچے، جہاں انہوں نے سینیٹ انتخابات کے حوالے سے ارکان سے مشاورت کی۔ ادھر صوبائی الیکشن کمشنر نے انتخابات ملتوی کرنے کا اعلان کردیا۔ الیکشن۔ ہو گیا، الیکشن کمیشن کے ملازمین سامان لے کر خیبرپختونخوا اسمبلی سے روانہ ہو گئے۔بعد ازاں الیکشن کمیشن نے خیبرپختونخوا میں سینیٹ انتخابات ملتوی کرنے کا تحریری حکم نامہ جاری کردیا۔ چیف الیکشن کمشنر سکندر سلطان راجہ کی سربراہی میں 5 رکنی الیکشن کمیشن نے تحریری حکم نامہ جاری کیا جس پر تمام اراکین کے دستخط بھی ہیں۔تحریری حکم نامے کے مطابق الیکشن کمیشن نے آئین کے آرٹیکل 218 اور الیکشن ایکٹ کی شق 3 کے تحت امیدواروں کی جانب سے حلف نہ اٹھانے کے باعث خیبرپختونخوا اسمبلی میں سینیٹ انتخابات ملتوی کر دیے ہیں۔تحریری فیصلے میں واضح کیا گیا ہے کہ بعض نشستوں پر کامیاب امیدواروں نے حلف اٹھانے کے لیے صوبائی اسمبلی کے اسپیکر سے رابطہ کیا تھا، اس کے باوجود صوبائی اسمبلی کے اسپیکر نے حلف کے حوالے سے کوئی انتظام نہیں کیا۔ نشستیں منتخب اراکین کے حلف سے مشروط تھیں۔

اپنا تبصرہ لکھیں