موت کے جعلی اعلان پر پونم پانڈے تنقید کی زد میں

بھارتی اداکارہ اور ماڈل پونم پانڈے کی موت کی خبر جمعہ کو اس وقت سامنے آئی جب ان کے سوشل میڈیا اکاؤنٹ پر ایک پوسٹ میں کہا گیا کہ ان کا انتقال سروائیکل کینسر کے باعث ہوا۔ اس نے کہا میں زندہ ہوں۔ عام طور پر قیاس آرائیوں پر یقین نہیں کیا جاتا لیکن ایسے میں یہ خبر خود پونم پانڈے کے تصدیق شدہ اکاؤنٹ پر سامنے آئی ہے۔ ایک مقامی چینل ‘انڈیا ٹوڈے’ پر یہ بھی بتایا گیا کہ ان کے منیجر نے اس کی تصدیق کی ہے لیکن اسی چینل نے اس حوالے سے ان کے مبینہ سیکیورٹی گارڈ سے بھی بات کی جو ان کی موت کی تصدیق نہیں کرسکا۔ سوشل میڈیا پر لوگ اس خبر کو دیکھ کر حیران رہ گئے اور اس پر یقین کرنے میں ہچکچا رہے تھے لیکن کوئی ایسی بات کیوں کہے گا اور آخر کار یہ خبر ان کے سوشل میڈیا پر بھی آ گئی۔ بھارت کے مقامی میڈیا کے علاوہ پاکستانی اور بین الاقوامی میڈیا میں بھی یہ خبر شائع ہوئی اور انٹرنیٹ پر سرچ کریں تو شہ سرخیاں ہیں کہ بھارتی اداکارہ پونم پانڈے کا 32 سال کی عمر میں انتقال ہو گیا ہے۔
“میں زندہ ہوں”
آج ان کی ایک ویڈیو منظر عام پر آئی جس میں انہوں نے کہا کہ میں زندہ ہوں۔ لیکن بدقسمتی سے میں ان سیکڑوں اور ہزاروں ہندوستانی خواتین کے بارے میں ایسا نہیں کہہ سکتا جن کی زندگی سروائیکل کینسر کی وجہ سے ختم ہوگئی۔ انہوں نے ویڈیو میں کہا کہ دوسرے کینسر کے مقابلے میں سروائیکل کینسر کے بارے میں لوگوں کو آگاہی نہیں ہے اور اس کینسر کا علاج بھی ممکن ہے۔پہلی ویڈیو کے بعد اپنی دوسری ویڈیو میں پونم پانڈے نے لوگوں سے معافی مانگی اور کہا کہ ان کا مقصد سب کو حیران کر کے سروائیکل کینسر کے بارے میں بات چیت شروع کرنا ہے۔ ان کے مطابق اس موضوع پر اتنی بات نہیں کی جاتی جتنی ہونی چاہیے۔ پونم نے یہ بھی اعتراف کیا کہ ان کی موت کا اعلان کرنا ان کے لیے ایک ‘بڑا قدم’ تھا، جس کی بدولت اب اس موضوع پر بات ہو رہی ہے۔

اپنا تبصرہ لکھیں