اقوام متحدہ ایک ‘یہود مخالف تنظیم’ اسرائیل بن چکی ہے۔

“اسرائیل نے فلسطینی خوراک کی فراہمی کے مراکز پر اسرائیلی حملوں کی مذمت کرنے اور فوری جنگ بندی کا مطالبہ کرنے پر اقوام متحدہ پر کھل کر تنقید کی ہے۔”
عرب میڈیا کے مطابق اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل انتونیو گوتریس نے غزہ اور رفح میں امداد اور خوراک کی تقسیم کے دوران اسرائیلی بمباری سے فلسطینی پناہ گزینوں کی ہلاکت پر شدید احتجاج کیا۔ غزہ کے سرحدی علاقے کے دورے کے دوران اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل نے خوراک کی فراہمی کو محفوظ بنانے کے لیے اسرائیل کے ساتھ فوری جنگ بندی کا مطالبہ کیا اور امداد اور خوراک کی فراہمی کے مراکز کی حفاظت کو یقینی بنانے کی ضرورت پر زور دیا۔جس پر اسرائیلی وزیر خارجہ کاٹز نے اقوام متحدہ پر غیر ضروری تنقید کرنے پر قانون چور کی مثال دی۔ سوشل میڈیا پر جاری ایک بیان میں صہیونی ریاست کے وزیر خارجہ نے کہا کہ انتونیو گوتریس کی قیادت میں اقوام متحدہ دہشت گردوں کی سرپرست اور یہودیوں اور اسرائیل کی دشمن تنظیم بن چکی ہے۔یاد رہے کہ ایک ہفتہ قبل اسرائیل نے اقوام متحدہ کے امدادی ادارے UNRWA کے سربراہ کو غزہ میں داخل ہونے سے روک دیا تھا۔ یو این آر اے کی تنصیبات پر اسرائیلی حملوں میں اب تک یو این آر اے کے اہلکاروں سمیت 150 سے زائد افراد ہلاک ہو چکے ہیں۔

اپنا تبصرہ لکھیں