امریکہ نے ایپل کے خلاف اجارہ داری کا مقدمہ دائر کیا ہے۔

نیو جرسی: امریکا نے ٹیکنالوجی کمپنی ایپل کے خلاف اسمارٹ فون مارکیٹ میں اجارہ داری قائم کرنے کا مقدمہ دائر کردیا۔ اس نے اپنے حریفوں اور صارفین کے انتخاب کو غیر قانونی طور پر محدود کرنے کے لیے آئی فون پر اپنا کنٹرول استعمال کیا۔دائر کیے گئے مقدمے کے مطابق کمپنی پر نئی ایپس کی تیاری کو روکنے اور حریف کمپنیوں کی مصنوعات کی کشش کو کم کرنے کا الزام ہے۔ یہ آئی فون پر صارفین کے انحصار کی حوصلہ شکنی کرتا ہے اور اسے صارفین اور ڈویلپرز کے لیے کم مہنگا بناتا ہے۔فائلنگ میں مبینہ طور پر کمپنی کی طرف سے اٹھائے گئے مقابلہ مخالف اقدامات کی فہرست دی گئی ہے، جس میں مقبول ایپس کو بلاک کرنا، موبائل کلاؤڈ سٹریمنگ سروسز کو بلاک کرنا، تھرڈ پارٹی ڈیجیٹل والٹس کو محدود کرنا اور دیگر کمپنیوں کے ذریعے بنائے گئے سمارٹ واچز کی فعالیت کو کم کرنا شامل ہے۔ایپل نے تمام الزامات کی تردید کی ہے اور اس کیس کو بھرپور طریقے سے لڑنے کا عہد کیا ہے۔ ایپل کے ترجمان فریڈ سینز نے امریکی میڈیا کو بتایا کہ یہ مقدمہ غلط حقائق پر مبنی ہے اور ایپل ان الزامات کے خلاف بھرپور طریقے سے اپنا دفاع کرے گا۔

اپنا تبصرہ لکھیں