راجن پور میں کپاس کے کاشتکاروں کی تربیت کیلئے سیمینار

“زرعی زہروں کے بجائے کسا ن دیگرطریقوں سے کیڑوں کاخاتمہ کریں”
راجن پور(بیورورپورٹ)ڈپٹی ڈائریکٹر زراعت توسیع راجن پور کے سیمینار ہال میں کپاس کی پیداواری ٹیکنالوجی اور کیڑوں کے مربوط طریقہ انسداد کے عنوان سے سیمینار کاانعقاد کیا گیا۔ سیمینار میں ڈاکٹر حیدر کرار ایڈیشنل سیکرٹری نے بطور ماسٹر ٹرینر شرکت کی اور شرکاء کو کپاس کی پیداواری ٹیکنالوجی اور کیڑوں کے مربوط طریقہ انسداد پر تربیت دی۔ انہوں نے بتایا کہ فیلڈ سٹاف کاشتکاروں کی رہنمائی کریں کہ کاشتکار گہرا ہل چلا کر اور لیزر لیولر چلا کر زمین تیار کریں۔ کاشتکار بر اترے ہوئے کپاس کے بیج کو دوائی لگا کر کاشت کریں۔ کاشتکار صرف زرعی زہروں پر انحصار کے بجائے مختلف طریقوں جیسے کہ دوست کیڑوں کے ذریعے حیاتیاتی کنٹرول، کلچرل کنٹرول،سفید مکھی کے پیلے چپکنے والے کارڈ اور گلابی سنڈی کیلئے جنسی پھندوں کے استعمال سے ضرر رساں کیڑوں کا انسداد کر سکتے ہیں۔ ٹریننگ میں تمام فیلڈ اسٹاف شعبہ زراعت توسیع و پیسٹ وارننگ نے شرکت کی اور کپاس کی پیداواری ٹیکنالوجی سے آگاہی حاصل کی۔ ٹریننگ میں ڈپٹی ڈائریکٹر زراعت توسیع راجن پور محمد آصف، اسسٹنٹ ڈائریکٹرز، زراعت آفیسران اور تمام فیلڈ سٹاف توسیع و پیسٹ وارننگ نے شرکت کی۔ایڈیشنل سیکرٹری نے فیلڈ سٹاف کو کپاس کی جدید پیداواری ٹیکنالوجی و کیڑوں کا مربوط طریقہ انسداد بارے تربیت دی اور مختلف سوالات کرکے فیلڈ سٹاف سے جوابا ت پوچھے ایڈیشنل سیکرٹری ڈاکٹر حیدر کرار نے ایک روزہ ریفریشر کورس برائے کپاس کی پیداواری ٹیکنالوجی کے شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ کپاس کی منافع بخش پیداوار میں اضافہ کے لئے جدید ٹیکنالوجی وقت کی اہم ضرورت ہے۔ ایڈیشنل سیکرٹری ایگری کلچرجنوبی پنجاب ڈاکٹر حیدر کرار نے افسران و فیلڈ سٹاف کو ہدایت کی کہ کاشتکاروں کو کپاس کی جدید پیداواری ٹیکنالوجی سے بہتر انداز میں آگاہی دیں اور متحرک ہو کر فیلڈ میں کام کریں۔

اپنا تبصرہ لکھیں