غزہ کو تباہ کرنے کے لیے 2 ایٹمی بموں کے برابر استعمال کیا گیا، اقوام متحدہ

نیویارک: اقوام متحدہ کا کہنا ہے کہ اسرائیل نے غزہ کو تباہ کرنے کے لیے 2 ایٹمی بموں کے برابر دھماکہ خیز مواد استعمال کیا ہے۔ اقوام متحدہ کے نمائندہ خصوصی برائے فلسطین کی جانب سے جاری کردہ رپورٹ میں انکشاف کیا گیا ہے کہ اسرائیل نے اب تک غزہ پر 25 ہزار ٹن کے برابر دھماکہ خیز مواد گرایا ہے۔ اس نے 2 کے برابر دھماکہ خیز مواد استعمال کیا ہے۔ ایٹم بمرپورٹ کے مطابق اسرائیلی فورسز نے ہسپتالوں، زرعی زمینوں، ہسپتالوں، تعلیمی اداروں اور فلسطینیوں کے گھروں کو مکمل طور پر تباہ کر دیا ہے۔ اسرائیلی حملوں میں 70 ہزار سے زائد فلسطینی زخمی ہو چکے ہیں جب کہ ہزاروں کو گرفتار کر لیا گیا ہے۔ اسرائیلی فوج نہتے فلسطینیوں پر بدترین انسانی مظالم ڈھا رہی ہے۔رپورٹ میں کہا گیا کہ اسرائیل یہ ثابت کرنے میں ناکام رہا ہے کہ غزہ میں ہلاک ہونے والوں کا تعلق حماس سے ہے۔ 7 اکتوبر 2023 سے غزہ پر اسرائیلی حملوں میں ہلاک ہونے والے فلسطینیوں کی تعداد 30,000 سے تجاوز کر گئی ہے جب کہ خیال کیا جاتا ہے کہ 12,000 اسرائیلی بمباری سے تباہ ہونے والی عمارتوں کے ملبے تلے دب کر ہلاک ہوئے ہیں۔

اپنا تبصرہ لکھیں