فیصل آباد میں نوجوان کی المناک موت کے بعد پتنگ بازوں نے پتنگیں جلانا شروع کر دیں۔

“فیصل آباد میں پتنگ کی ڈور سے نوجوان کی ہلاکت کے بعد پتنگ بازی کے خلاف قانون پر سختی سے عمل درآمد کا مطالبہ کیا جا رہا ہے۔”
22 سالہ نوجوان کی موت کا المناک منظر کئی راہگیروں نے کیمرے میں ریکارڈ کر لیا، بہت سے لوگوں نے اس ویڈیو کو دیکھا، جس پر شدید جذباتی ردعمل سامنے آیا۔ ویڈیو وائرل ہونے کے بعد سوشل میڈیا صارفین نے غم کا اظہار کیا ہے۔وائرل ویڈیو میں آصف کو 22 مارچ کو فیصل آباد میں اپنی موٹر سائیکل سے گرتے ہوئے دیکھا جا سکتا ہے۔ رسی اس کے گلے میں پھنس گئی۔ عینی شاہدین نے نوجوان کے خون میں بھیگے ہوئے کپڑے دیکھے اور اس کی مدد کے لیے بھاگے لیکن اس کا خون اتنا بہہ رہا تھا کہ نوجوان کو بچایا نہ جا سکا۔ آصف افطاری کے لیے سامان کی خریداری کے بعد گھر واپس جا رہا تھا۔ نوجوان کی شادی بھی عید کے فوراً بعد طے ہو گئی۔ سوشل میڈیا پر آنے والی رپورٹس میں دعویٰ کیا جا رہا ہے کہ نوجوان کی والدہ صدمے سے چل بسی ہیں تاہم ان خبروں کی ابھی تک آزادانہ طور پر تصدیق نہیں ہو سکی ہے۔

اپنا تبصرہ لکھیں