وزیراعظم، میڈیا پاکستان کی ترقی اور خوشحالی کے لیے حکومت کی کوششوں کا ساتھ دیں۔

“اسلام آباد: وزیر اعظم شہباز شریف نے کہا ہے کہ میڈیا ریاست کا چوتھا ستون ہے اور معاشرے کی ترقی میں بہت اہم ہے۔ حکومت اظہار رائے کی آزادی پر یقین رکھتی ہے۔”
تفصیلات کے مطابق وزیر اعظم محمد شہباز شریف سے پاکستان براڈ کاسٹرز ایسوسی ایشن کے وفد نے ملاقات کی اور شہباز شریف کو عہدہ سنبھالنے پر مبارکباد دی اور ان کے لیے نیک خواہشات کا اظہار کیا۔پاکستان براڈ کاسٹرز ایسوسی ایشن کے وفد میں شکیل مسعود، میر ابراہیم، میاں عامر محمود اور سلطان لاکھانی شامل تھے جب کہ وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات عطا اللہ تارڑ اور متعلقہ اعلیٰ سرکاری حکام ملاقات میں موجود تھے۔ وفد سے بات کرتے ہوئے وزیراعظم نے کہا کہ ہم نے ایسے وقت میں اقتدار سنبھالا ہے جب ملک کو بے پناہ مشکلات کا سامنا ہے، سب سے بڑا چیلنج معیشت کو پٹری پر لانا ہے۔وزیراعظم نے وفد کو حکومت کی معاشی ترجیحات سے آگاہ کرتے ہوئے کہا کہ خسارے میں چلنے والے سرکاری اداروں کی نجکاری، ادارہ جاتی اصلاحات، اندرونی و بیرونی سرمایہ کاری اور کفایت شعاری حکومت کی ترجیحات ہیں۔ اس کے لیے ایک کمیٹی بنائی گئی ہے جو جلد اپنی سفارشات پیش کرے گی اور پھر یہ سفارشات ملک کے سامنے پیش کروں گا۔وزیراعظم نے کہا کہ وفاقی کابینہ نے رضاکارانہ طور پر تنخواہوں اور مراعات کو ترک نہ کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ شہباز شریف نے کہا کہ فیڈرل بورڈ آف ریونیو کی 100 فیصد ڈیجیٹلائزیشن کے لیے بین الاقوامی معیار کے ماہرین کی خدمات لی جا رہی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اچھے ٹیکس دہندگان، برآمد کنندگان اور خواتین کاروباریوں کو حکومتی سطح پر پہچان ملے گی۔
“وزیراعظم، میڈیا ریاست کا چوتھا ستون ہے۔”
میڈیا کی اہمیت پر بات کرتے ہوئے وزیراعظم نے کہا کہ میڈیا ریاست کا چوتھا ستون ہے، معاشرے کی ترقی اور لوگوں کی ذہنی و فکری تربیت میں الیکٹرانک میڈیا کا کردار بہت اہم ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت آزادی اظہار اور میڈیا کی آزادی پر یقین رکھتی ہے اور اس سلسلے میں ہر ممکن اقدامات اٹھائے جا رہے ہیں۔ان کا مزید کہنا تھا کہ میڈیا کے نمائندوں کے حقوق کا تحفظ ریاست کی ذمہ داری ہے، مجھے امید ہے کہ میڈیا غیر جانبدارانہ رپورٹنگ کے ذریعے جمہوریت کے استحکام میں اپنا کردار ادا کرتا رہے گا۔ انہوں نے کہا کہ جعلی خبریں ایک بڑا چیلنج ہے اور اس کی روک تھام میں مین سٹریم میڈیا کا کردار بہت اہم ہے۔

اپنا تبصرہ لکھیں