پختونخوا; بارش میں چھت گرنے سے جاں بحق، پشاور اندھیرے میں ڈوب گیا۔

“پشاور: پختونخوا کے مختلف علاقوں میں بارش کے دوران چھتیں گرنے سے 4 افراد جاں بحق جب کہ پشاور اندھیرے میں ڈوب گیا۔ صوبے کے مختلف اضلاع میں بارشوں کے دوران کمزور چھتیں گرنے سے متعدد افراد زخمی ہوگئے۔ ٹرپنگ کے باعث صوبائی دارالحکومت میں پیسکو کے تمام فیڈرز پر 24 گھنٹے سے زائد بجلی بند رہی۔ محکمہ موسمیات کے مطابق پشاور سمیت خیبرپختونخوا کے تمام اضلاع میں وقفے وقفے سے بارش کا امکان ہے۔ ہزارہ اور مالاکنڈ ڈویژن میں بھی گرج چمک کے ساتھ مزید بارش کی پیشگوئی کی گئی ہے۔بارش کے بعد پشاور کا کم سے کم درجہ حرارت 15 ڈگری سینٹی گریڈ اور زیادہ سے زیادہ 20 ڈگری سینٹی گریڈ ریکارڈ کیا گیا۔ گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران سب سے زیادہ 66 ملی میٹر بارش چیرات میں ریکارڈ کی گئی۔ اس کے علاوہ دیر 64، مالم جبہ 55، پشاور 48، تخت بائی 35، شیدو شریف 55 جب کہ چترال میں 23 ملی میٹر بارش ریکارڈ کی گئی۔ خیبرپختونخوا کے بالائی اضلاع میں بارش کے ساتھ ساتھ برفباری کا سلسلہ بھی جاری ہے۔ محکمہ موسمیات کے مطابق کالام میں 5 انچ تک برفباری ریکارڈ کی گئی ہے۔ادھر پشاور میں بارش کے دوران پیسکو کے تمام فیڈر ٹرپ کر گئے اور پورا شہر اندھیرے میں ڈوب گیا۔ 24 گھنٹے بجلی کی بندش کے باعث شہریوں نے اندھیرے میں ناشتہ تیار کیا جب کہ یو پی ایس سمیت دیگر متبادل نظام بھی طویل خرابی کے باعث بند ہوگئے جس کے بعد بجلی کی بحالی کا کام جاری ہے۔ریسکیو 1122 شانگلہ کے مطابق تحصیل الپوری لیلونی بانڈہ چنہ میں موسلادھار بارش کے باعث پراویت خان نامی شخص کے گھر کا کمرہ گر گیا جس کے باعث دو افراد ملبے تلے دب گئے اور ایک بچی زخمی ہو گئی۔ علاج کے لیے اسپتال میں داخل کرایا گیا ہے۔ جاں بحق اور زخمی ہونے والوں میں عرفان اللہ ولد پربی خان عمر 14 سال، مسمات (ر) بیٹی پرابی خان عمر 16 سال جبکہ زخمیوں میں مسمات (ر) بیٹی پربی خان عمر 12 سال شامل ہیں۔اسی طرح باجوڑ کی تحصیل نوگئی گاؤں کھاریاں میں ایک کمرے کی چھت گر گئی جس کے باعث 3 افراد ملبے تلے دب گئے۔ اطلاع ملتے ہی ریسکیو 1122 نے موقع پر پہنچ کر ریسکیو آپریشن کرتے ہوئے ملبے تلے دبے 3 افراد کو نکال کر ہسپتال پہنچایا۔ زخمیوں میں ادریس نامی شہری کی 26 سالہ بیوی اور 2 سالہ بیٹی جاں بحق جبکہ اس کا 4 سالہ بیٹا زخمی ہوگیا۔

اپنا تبصرہ لکھیں