اسماعیل ہنیہ کے بیٹوں اور پوتوں کی شہادت اسرائیل کی ناکامی کا اعتراف ہے، فضل الرحمان

“جمعیت علمائے اسلام کے سربراہ مولانا فضل نے اسرائیلی حملے میں شہادت پر حماس کے رہنما اسماعیل ہنیہ کے بیٹوں اور پوتوں کے نام تعزیتی خط بھیجا ہے۔”
مولانا فضل الرحمان نے اپنی اور جمعیت علمائے اسلام کی جانب سے اسماعیل ہانیہ کو لکھے گئے خط میں ان کے بیٹوں اور پوتوں کی شہادت پر تعزیت کا اظہار کرتے ہوئے سوگوار خاندانوں کے لیے صبر جمیل اور شہداء کی مکمل مغفرت کی اپیل کی ہے۔ فلسطین کی تحریکِ نماز کے قائدین کا یہ بیان درحقیقت دشمن کی ناکامی کا اعتراف ہے۔ اسرائیل کے جارحانہ اقدامات تحریک جہاد کی جرات اور طاقت اور بزدل صہیونی فوج کے خلاف اس کی مضبوط منصوبہ بندی کا منہ بولتا ثبوت ہیں۔انہوں نے لکھا کہ شہداء کی شہادت نہ صرف فلسطینی قوم کا نقصان ہے بلکہ پوری عالم اسلام کا نقصان ہے، انشاء اللہ شہداء کا خون رائیگاں نہیں جائے گا۔ فضل الرحمان نے لکھا کہ ہم حماس کی طرف سے جہاد میں کی جانے والی کوششوں کی حمایت کرتے ہیں اور عالمی برادری سے مطالبہ کرتے ہیں کہ فلسطینیوں کے خلاف ظلم و تشدد کو ہمیشہ کے لیے بند کیا جائے۔انہوں نے لکھا کہ شہداء کی شہادت نہ صرف فلسطینی قوم کا نقصان ہے بلکہ پوری عالم اسلام کا نقصان ہے، انشاء اللہ شہداء کا خون رائیگاں نہیں جائے گا۔ فضل الرحمان نے لکھا کہ ہم حماس کی طرف سے جہاد میں کی جانے والی کوششوں کی حمایت کرتے ہیں اور عالمی برادری سے مطالبہ کرتے ہیں کہ فلسطینیوں کے خلاف ظلم و تشدد کو ہمیشہ کے لیے بند کیا جائے۔اپنے خط میں فضل الرحمان نے لکھا کہ وہ اسپتالوں اور مہاجر کیمپوں کو نشانہ بنانے کی مذمت اور افسوس کرتے ہیں۔ فضل الرحمان نے دعا کی کہ اللہ تعالیٰ اپنی رحمت سے شہداء کو جنت الفردوس میں جگہ عطا فرمائے۔ تو یہ ہو جائے

اپنا تبصرہ لکھیں