روس اور جرمنی نے ایران کی طرف سے اسرائیل پر حملے کی دھمکی پر ردعمل ظاہر کیا ہے۔

“ایران کی جانب سے اسرائیل پر حملے کی دھمکی کے پیش نظر روس اور جرمنی نے مشرق وسطیٰ کے ممالک پر زور دیا ہے کہ وہ تحمل سے کام لیں۔”
غیر ملکی خبر رساں ایجنسی ’رائٹرز‘ کے مطابق ماسکو نے اپنے شہریوں کے لیے ٹریول ایڈوائزری جاری کرتے ہوئے انہیں مشرق وسطیٰ کا سفر کرنے سے خبردار کیا ہے جب کہ جرمن ایئرلائن لفتھانزا نے تہران کے لیے دو میں سے ایک پرواز کو معطل کر دیا ہے۔ایران پر اسرائیلی فضائی حملے کے خلاف جوابی کارروائی کے لیے پرعزم تھا۔ یکم اپریل کو دمشق میں اس کے سفارت خانے کے احاطے میں۔ اس حملے میں ایک اعلیٰ ایرانی جنرل اور 6 دیگر ایرانی فوجی افسران مارے گئے۔دریں اثنا، جرمن وزیر خارجہ اینالینا بیربوک نے اپنے ایرانی ہم منصب حسین امیرعبداللہیان سے مطالبہ کیا کہ وہ مزید کشیدگی سے بچنے کے لیے “زیادہ تحمل” پر زور دیں دریں اثنا، انہوں نے مشرق وسطیٰ کے شہریوں سے کہا کہ وہ محتاط رہیں، خاص طور پر اسرائیل کا سفر نہ کریں۔ لبنان اور فلسطین کے علاقے کریملن کے ترجمان نے ایک نیوز بریفنگ میں کہا کہ اب سب کو تحمل سے کام لینا چاہیے تاکہ خطے کی صورتحال مکمل طور پر عدم استحکام کا شکار نہ ہو۔

اپنا تبصرہ لکھیں