‘کانگریس کا منشور پاکستان میں کام کر سکتا ہے، ہندوستان میں نہیں’

بھارتی ریاست آسام کے وزیراعلیٰ ہمانتا بسوا سرما نے کہا ہے کہ حزب اختلاف کی سب سے بڑی جماعت کانگریس کا منشور بھارت کے لیے نہیں بلکہ پاکستانی انتخابات کے لیے موزوں ہے۔ ‘گرینڈ اولڈ پارٹی’ نے ہمنتا سرما کے تبصروں کو مسترد کر دیا ہے۔انڈیا ٹوڈے کی ایک رپورٹ کے مطابق ہمانتا سرما نے کانگریس کے انتخابی منشور پر تنقید کرتے ہوئے اسے تفریحی اور بچگانہ تسلیوں پر مبنی قرار دیا ہے۔ میڈیا کے نمائندوں سے بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ راہول گاندھی سماج کو تقسیم کرکے اقتدار حاصل کرنا چاہتے ہیں۔ کانگریس کے منشور میں انصاف کے پانچ ستون اور ان کے تحت 25 مختلف ضمانتیں شامل ہیں۔ کانگریس نے یہ بھی وعدہ کیا ہے کہ وہ ملک بھر کے کسانوں کے لیے کم از کم قیمت خرید (سپورٹ پرائس) کو دوبارہ متعین کرے گی۔حزب اختلاف کی سب سے بڑی پارٹی کا کہنا ہے کہ ہمنتا سرما جیسے وفادار کبھی بھی سیکولرازم کی روح کو نہیں سمجھ سکتے۔ قابل ذکر ہے کہ ہمنتا سرما کانگریس میں تھے اور 2015 میں انہوں نے بھارتیہ جنتا پارٹی میں شمولیت اختیار کی تھی۔

اپنا تبصرہ لکھیں